Latest Post
Loading...

Hijar Karte Ya Koi Wasal Guzara Karte Hum Bahar-Haal Basar Khuwaab Tumhara Karte

 

Hijar Karte Ya Koi Wasal Guzara Karte

Hum Bahar-Haal Basar Khuwaab Tumhara Karte

Aik Aisi Bhi Gharri Ishq Mein Aai Thi Keh Hum

Khaak Ko Haath Lagate To Sitara Karte

Ab To Mil Jao Humein Tum Keh Tumhari Khaatir

Itni Door Aa Gaye Dunya Se Kinara Karte

Maho-e-Aaraish-e-Rukh Hai Wo Qayamat Sar-e-Baam

Aankh Agar Aaina Hoti To Nazaara Karte

Aik Chehre Mein To Mumkin Nahi Itne Chehre

Kis Se Karte Jo Koi Ishq Dobaara Karte

Jab Hai Ye Khaana-e-Dil Aapki Khalwat Ke Liye

Phir Koi Aaye Yahaan ,Kaise Gawara Karte

Kon Rakhta Hai Andhere Mein Diya Aankh Mein Khuwaab

Teri Janib Hi Tere Log Ishaara Karte

Zarf-e-Aaina Kahan Aur Tera Husn Kahan

Hum Tere Chehre Se Aaina Sanwaara Karte

Obaid-U-LLAH Aleem


ہجر کرتے یا کوئی وصل گزارا کرتے

ہم بہرحال بسر خواب تمھارا کرتے

ایک ایسی بھی گھڑی عشق میں آئی تھی کہ ہم

خاک کو ہاتھ لگاتے تو ستارا کرتے

اب تو مل جاؤ ہمیں تم کہ تمھاری خاطر

اتنی دور آ گئے دنیا سے کنارا کرتے

محوِ آرائشِ رُخ ہے وہ قیامت سرِ بام

آنکھ اگر آئینہ ہوتی تو نظارا کرتے

ایک چہرے میں تو ممکن نہیں اتنے چہرے

کس سے کرتے جو کوئی عشق دوبارا کرتے

جب ہے یہ خانہ ء دل آپکی خلوت کے لئے

پھر کوئی آئے یہاں ، کیسے گوارا کرتے

کون رکھتا ہے اندھیرے میں دیا آنکھ میں خواب

تیری جانب ہی ترے لوگ اشارا کرتے

ظرفِ آئینہ کہاں اور ترا حسن کہاں

ہم ترے چہرے سے آئینہ سنوارا کرتے

(عبید اللہ علیم)


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer