Latest Post
Loading...

Kash Meri Koi Beti Hoti, Bas Main Us Se Itna Kehta,



=========== ایک باپ کے جذبات ===========

شاعر اعتبار ساجد
بوک میرے خط مجھے واپس کر دو صفہ 43 44

انتخاب اجڑا دل

کاش میری کوئی بیٹی ھوتی
بس میں اس سے اتنا کہتا
دیکھو میری چاند سی گڑیا
ہر دم
ہر پل
تم خوش رہنا
تنہائی کا دکھ نہ سہنا
اور اگر ایسی مشکل آۓ
چپ مت رہنامجھ سے کہنا
مداوا کر سکتا ہوں
تم کو خوش رکھنے کی خاطر
میں قسطوں میں مر سکتا ہوں
جس کو اپنی گود میں پالا
اس کے آنسوں میں اپنی بے آب آنکھوں میںبھر سکتا ہوں
ہاں میں ایسا کر سکتا ہوں
کاش میری کوئی بیٹی ہوتی..................*

 

===========KAAAAAAAASH===========

Poet Aetbaar Sajid

Kash Meri Koi Beti Hoti,
Bas Main Us Se Itna Kehta,
Dekho Meri Chaand Si Gurriya,
Har DamHar Pal,
Tum Khush Rehna,
Tanhaai K Dukh Mat Sehna,
Aur Agar Aisi Mushkil Ho,
Chup Mat Rehna,
Mujh Se Kehna,
Haan Main Tumhare Dukh Ka,
Mudawa Kar Sakta Hoon,
Tum Ko Khush Rakhne Ki Khatir,
Main Qiston Mein Mar Sakta Hoon,
Jis Ko Apni Goud Mein Pala,
Us K Aansooon,
Main Apni Be Aab Aankhoon Mein,
Bhar Sakta Hoon,
Haan Main Aisa Kar Sakta Hoon,
Kash Meri Koi Beti Hoti...................*.

Book
Mere Khat Mujhe Wapas Kar Do
Page 43 44

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer