Latest Post
Loading...

Muhabbat Ko Dasne Lagi Hain Ye Zaatein Wafa Ro Rahi Hai


شاعرہ نجمہ شاہین کھوسہ
بوک میں آنکھیں بند رکھتی ہوں
صفحہ 261

انتخاب اجڑا دل

محبت کو ڈسنے لگی ہیں یہ ذاتیں
وفا رو رہی ہے
ہوئی اب چمن میں ہی خوشبو کو ماتیں
ہوا رو رہی ہے

بھرا ایک لڑکی کی جھولی میں صدیوں کا دکھ جانے کس نے
کہ شہنائی میں بھی ملی درد گھاتیں حنا رو رہی ہے

ادھر پیاس صحرا میں اتری ہے دہکی ہے اک دھوپ ہر سو
ادھر دشت آنکھوں میں بے خواب راتیں ضیاء رو رہی ہے

جو پہروں کبھی تجھ سے کرتی تھی باتیں جو ہنستی بہت تھی
وہ خود کو مسلسل تیری آج باتیں سنا رو رہی ہے

وہ قربت کی باتیں وہ مہکی سی راتیں کہاں کھو گئی ہیں

محبت کی پونی کہاں جاکے کاتیں دعا رو رہی ہے


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer