Latest Post
Loading...

Raqas Karte Huye Jis K Shaanoon Pe Toone Abhi Sar Rakha Hai

شاعرہ
پروین شاکر
بوک خوشبو صفہہ 94

انتخاب اجڑا دل

رقص کرتے ہوۓ جس کے شانوں پہ
تونے ابھی سر رکھا ہے

کبھی میں بھی اس کی پناہوں میں تھی

فرق یے ہے کہ میں
رات سے قبل تنہا ہوئی
اور تو صبح تک
اس فریب ۓ تحفظ میں کھوئی رہے گی

Poetess Parveen Shakir

Typed
By
*_UJRRA_DIL_*

Raqas Karte Huye

Jis K Shaanoon Pe

Toone Abhi Sar Rakha Hai,

Kabhi Main Bhi Us Ki Panaahoon Mein Thi,

Faraq Ye Hai Keh Main

Raat Se Qabl Tanha Hui,

Aur Too Subh Tak,

Us Faraib-E-Nazar Mein Khoi Rahe Gi.........................*


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer