Latest Post
Loading...

zindagi hamain kaisy kaisy rang daikhati hy kabhi hansati hy kabhi rulati isi ka naam.zindagi hy

تجھ سے ناراض نہیں زندگی، حیران ھوں میں
تیرے معصوم سوالوں سے پریشاں ھوں میں

جینے کے لیئے سوچا ہی نہیں ، درد سنبھالنے ھونگے
مسکرائیں تو مسکرانے کے قرض اتارنے ھونگے

مسکراؤں کبھی تو لگتا ھے
جیسے ہونٹوں پہ قرض رکھا ھے

تجھ سے ناراض نہیں زندگی، حیران ھوں میں
تیرے معصوم سوالوں سے پریشاں ھوں میں

زندگی تیرے غم نے ہمیں رشتے نئے سمجھائے
ملے جو ہمیں دھوپ میں ملے چھاؤں کے ٹھنڈے سائے

تجھ سے ناراض نہیں زندگی، حیران ھوں میں
تیرے معصوم سوالوں سے پریشاں ھوں میں

آج اگر بھر آئی ھے بوندیں برس جائینگی
کل کیا پتا ان کے لیئے آنکھیں ترس جائینگی

جانے کب گم ھوا کہاں کھویا
ایک آنسو چھپا کے رکھا تھا

تجھ سے ناراض نہیں زندگی، حیران ھوں میں

تیرے معصوم سوالوں سے پریشاں ھوں میں

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer