Latest Post
Loading...

Raat Dhalne Lagi Chale Aao, Jaan Nikalne Lagi Chale Aao,


شاعرہ نسیم نازش
بک محبت روشنی ہے
صفحہ 75 76
انتخاب اجڑا دل
رات ڈھلنے لگی چلے آؤ
جان نکلنے لگی چلے آؤ
آ رہا ہے بہار کا موسم
رت بدلنے لگی چلے آؤ
دل کے دریا میں درد کی ناؤ
تیز چلنے لگی چلے آؤ
روح میں میری یاس کی قندیلیں
پھر سے جلنے لگی چلے آؤ
ہوکے مایوس زندگی میری
ہاتھ ملنے لگی چلے آؤ
دائمی ہو نہ جاۓ یے شب ۓ غم
صبح ہونے لگی چلے آؤ
خواہش ۓ صبح کے ستاروں کو
شب نگلنے لگی چلے آؤ
نازش اس سے کہو کہ شمع ۓ امید اب پگھلنے لگی چلے آؤ

Poetess Naseem Nazish
Type By
*_UJRRA_DIL_*
Raat Dhalne Lagi Chale Aao,
Jaan Nikalne Lagi Chale Aao,
Aa Raha Hai Bahaar Ka Muasam,
Rut Badlne Lagi Chale Aao,
Dil K Darya Mein Dard Ki Nawo,
Taiz Chalne Lagi Chale Aao,
Rooh Mein Meri Yaas Ki Qandeel,
Phir Se Jalne Lagi Chale Aao,
Ho K Mayoos Zindagi Meri,
Hath Malne Lagi Chale Aao,
Daaimi Ho Na Jaye Ye Shab-E-Gham,
Subha Hone Lagi Chale Aao,
Khawahish-E-Subha K Sitaaron Ko,
Shab Niglne Lagi Chale Aao,
Nazish Us Se Kaho Keh Sham'ma-E-Umeed,
Ab Pighlne Lagi Chale Aao...................*
.
Book Mohabbat Roshni Hai
Page 75 76

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer