Latest Post
Loading...

Raza-E-Ishq Ko Tasleem Karna Parrta Hai,Kisi Ko Zindagi Dene Ko Marna Parrta Hai




رضائے عشق کو تسلیم کرنا پڑتا ہے
کسی کو زندگی دینے کو مرنا پڑتا ہے

کنواں ہو نہر ہو یا ریت کا سمندر ہو
کہ اپنے حصے کا پانی تو بھرنا پڑتا ہے

یہی ہے ریت محبت کی ، ضابطہ ہے یہی
جو بھول جائے اسے یاد کرنا پڑتا ہے

تماشہ دیکھ رہا ہے وہ ساحلوں پہ کھڑا
سو مجھ کو ڈوب کے پھر سے ابھرنا پڑتا ہے

یہ خار خار مسافت ، یہ عشق کا صحرا
یہاں سے اہلِ وفا کو گزرنا پڑتا ہے

دلشاد نسیم
 


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer