Latest Post
Loading...

Shokhyi-e-gul bhi hai, Kuch kanton ki chuban bhi hai Kuch meray soz a Juno main , shakistagi yaa gul bhi hai


شوخئ گل بھی ہے ، کچھ کانٹوں کی چبھن بھی ہے  

کچھ میرے سوز جنوں میں ، شکستگی گل بھی ہے 

حسن کی نزاکتوں کے درمیاں ، شوخئ تبسم پنہاں

میری مسکراہٹوں کے درمیاں کچھ نالہء بلبل بھی ہے 

تو سدا خوش رہے ، خلوص دل سے دعا ہے یہ میری 

کیوں تیری آنکھوں میں ، میرے آنسؤں کی نمی بھی ہے

مہکتی فضاء میں دہکتے گلاب ہیں کچھ یادوں کے 

کچھ بازگشت ہنسی کی ، کچھ دل میرا اداس بھی ہے

پھول بھیگ بھیگ گئیے، گریہء شبنم سے تمام شب 

ہجر کی لذتوں میں کچھ اشکوں کی بارش بھی ہے   

سلیمہ

 
Shokhyi-e-gul bhi hai, Kuch kanton ki chuban bhi hai 

Kuch meray soz a Juno main , shakistagi yaa gul bhi hai 

Husn ki nazakaton Kay dermia, shokhi a Tabassum pinha 

Meri muskerahaton ki qasm , Kuch nalay a bulbul bhi hai 

Tu sada khush rahay, khalos dil say dua hai meri 

Keon tere. Ankh main , meray ansoon ki nami bhi hai 

Mahkti fizza main dhaktay gulab Kuch yaadon Kay 

Kuch bazghasht hansi ki , Kuch dil mera udas bhi hai 

Phool bheeg bheeg gayaa, geryaa shabnum say tamam shab 

Hijr ki lazaton main , Kuch ashkon ki barish bhi hai

Salima

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer