Latest Post
Loading...

Subh Kay sayaa , pani main Jaisay aftab ki kernain mahv sajda hon


صبح کے سائیے، پانی میں،
جیسے آفتاب کی کرنیں محؤ سجدہ ہیں
جیسے عاشق سرنگوں محبوب کے لئیے
کچھ بے ترتیب ، کچھ لاپرواہ میرا وجود
اپنی خواہشوں کے جال میں الجھا سا وجود
شب کی تاریکیوں میں ڈوبا وجود
کوئ آہٹ دل کے دریچے پہ ہوئ
تاریکی چھٹ گئ ، آمد سحر ہوئ
آنکھیں اشکبار، ندامت کی نمی
موتیوں کی بارش ، یہ احساس معصیت میرا
شکستہ ذات میری ،اے خدا یہ عنایت تیری
خدا کی شان جلوہ گر ہر سو
ہر صبح ، نئ امید کی خوشبو
یہ میرے عشق کے امتحاں کی منزل

 Subh Kay sayaa , pani main
Jaisay aftab ki kernain mahv sajda hon
Jaisay aashiq serangon mahboob Kay leeyaa
Kuch bay terteeb , laperwah mera wajood
Apni khawaishon Kay jal main uljha sa wajood
Shab ki tareekeon main dooba wajood
Koi aahat , dil Kay dareechay pay howee
Tareeki chat gayee, aamad a saher howee
Ankhain ashkbar , nidamat ki nami
Motiyon ki barish, yeh ahsaas masiat mera
Skakista zaat meri, ay Khuda yeh inayat tere
Khuda ki shaan jalwa ger her sou
her subh , nayee umeed ki khusbo
Yeh meray Ishq Kay imtehan ki manzil !!!

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer