Latest Post
Loading...

Hujjaji Qaflay Ki Shakal Le Ke Saara Saal,Be-Rang Ehraam Bandhy Hoe Nazm-O-Zabt Mein (Razab Tabraiz)


جنم دن کے حوالے سے میری ایک نظم آپ سب اہل_ذوق کی نظر ...

!!!! سالانہ سند !!!!
حُجّاجی قافلے کی شکل لے کے
سارا سال !
بے رنگ احرام باندھے ہوئے نظم وضبط
میں ۔۔۔
زباں پہ وردِ صبر کی پکا کے تسبیاں !
آنسو
میری بنیادوں میں کرتے رہے سفر ۔۔۔
حسبِ معمول
خون نے "جی آیاں نوں کہا"
ا س سال
بھی حُجّاج کو سستایا قلب نے ۔۔۔
اس بار
بھی یوں کوچہء جاں نے جھیلا
قافلہ !
"اک اور اینٹ گرگئی دیوارِ جان سے"
اس سال
بھی نمی کے ہاتھ نصرتیں رہیں !!!
  رزب تبریز

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer