Latest Post
Loading...

Ya Ye Faraib Khayeye Keh Regzar Mein Hum Qadam Hain Ap Kisi Nazneen K Saath (Razab Tabraiz)


یا یہ فریب کهائیے
کہ ریگ زار میں
ہم قدم ہیں آپ کسی
نازنیں کے ساتھ

یا شمس کی شکست
کو بصورت_فرہاد
سفر کی دهول چاٹیے
عرق_جبیں کے ساتھ

یا منکری میں تولیے
درویش کی غزل
یا ایک کوشش کیجیے
اسی زمیں کے ساتھ

یا خرد سے نکاح کی
طلب بهول جائیے
یا جنگ و جدل کیجیے
دل_حزیں کے ساتھ

یا طنزیہ چمکاریے
ہر اک خراش کو
یا عکس دیکھ لیجیے
عجب یقیں کے ساتھ

یا مان لیجیے کہ
آپ خود آسیب ہیں
یا سائے کو بهگائیے
نہیں نہیں کے ساتھ

یا خود دلالی کیجیے
شرم کی جان سے
یا صبر پال لیجیے
صدق_امیں کے ساتھ

یا یہ دروغ کیجیے
ہے جانے رب کہاں
یا مان جائیے رزب
رگ_قریں کے ساتھ
( رزب تبریز)

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer