Latest Post
Loading...

Ab Kia Lekhein Hum Kaghaz Par Ab Lekhney Ko Kia Baqi Hai


اب کیا لکھیں ہم کاغز پر
اب لکھنے کو کیا باقی ہے
اک دل تھا وہ بھی ٹوٹ گیا

اب ٹوٹنے کو کیا باقی ہے

اک شخص کو ہم نے چاہا تھا
اک ریت پے نقش بنایا تھا
وہ ریت تو کب کی بکھر گئی
وہ نقش کہاں اب باقی ہے

لفظوں کا بنا کر تاج محل
کاغز پے سجایا کرتے تھے
وہ ہم کو اکیلا چھوڑ گیا
سب رشتوں سے منہہ موڑ گیا

اب راستے سارے سونے ہیں
وہ پیار کہاں اب باقی ہے
اب کیا لکھیں ہم کاغز پر
اب لکھنے کو کیا باقی ہے

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer