Latest Post
Loading...

Kashish Pe Mushtamal Be-dad Kahan Hai Ulfat Hai Saheefa Ru-dad Kahan Hai (Razab Tabraiz)


کشش پہ مشتمل بیداد کہاں ہے
الفت ہے صحیفہ روداد کہاں ہے
برگزیدہ شوق عمل کی راہ میں
ہے فطرتاً خلیل شداد کہاں ہے
آنکھ بیچ لے ہر طرح کا مال
اے گرمئ بازار کساد کہاں ہے
دوش کی ابھی اڑاؤ نہ پتنگ
تم کو کیا خبر ہمزاد کہاں ہے
آزار سو رہے بڑے سلوک سے
بڑا سکون ہے فساد کہاں ہے
اوباش بنے ہیں جرم شہر میں
کہاں ہیں نیکیاں بہزاد کہاں ہے
خالی ہاتھ ہیں وفا کے زائچے
املاک کون سی جائداد کہاں ہے
سیرت تا حشر معیار_حسن ہے
انسان کو عزیز پری زاد کہاں ہے
عشق_خودی میں ولولے کے ساتھ
کھود لے نہر فرہاد کہاں ہے
انا کی زلیخا آج بھی رزب
پابند_ذات ہے آزاد کہاں ہے
(رزب تبریز)

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer