Latest Post
Loading...

Ye Shikaar-e-Jaan Ka Mousam Ye June Ka Maheena Jise Dekho Aankh Bhar Ke Usay Aae Ik Paseena(Razab Tabraiz)


Ye Shikaar-e-Jaan Ka Mousam
Ye June Ka Maheena
Jise Dekho Aankh Bhar Ke
Usay Aae Ik Paseena
Chaand Apni Dilkashi Mein
Koi Trasha Hua Nakhun
Shab Ultey Paon Wali 
Ik Khubru Haseena
Kai Waqiat Dekhey
Iss Shehr-e-Neem Jaan Ne
Kai Kofi Jhail Betha
Mere Dil Ka Ye Madeena
Wo Lagey To Aik Aswad
Wo Dekhey To Aik Tara
Yahi Baat Door Ras Hai
Yahi Akhri Qareena
Dekho To Masha ALLAH
Karrial Jawan Saare
Mere Dard Mere Betey
Main Hon Sahib-e-Nareena
Ye Naseeb Hum Ne Dekha
Har Baat Mein Juwari
Kabhi Jeet Laye Moujein
Kabhi Haar De Safeena
Nahi Itbar Koi
RAZAB Nafs-e-Bad-Guman Ka
Na Andaza-e-Harf-e-Aakhir
Na Aakhiri Takhmeena
(Razab Tabraiz)

یہ شکار_جاں کا موسم
یہ جون کا مہیینہ
جسے دیکھو آنکھ بھر کے
اسے آئے اک پسینہ
چاند اپنی دلکشی میں
کوئی ترشا ہوا ناخن
شب الٹے پاؤں والی
اک خوبرو حسینہ
کئی واقعات دیکھے
اس شہر_نیم جاں نے
کئی کوفی جھیل بیٹھا
میرے دل کا یہ مدینہ
وہ لگے تو ایک اسود
وہ دکھے تو ایک تارا
یہی بات دور رس ہے
یہی آخری قرینہ
دیکھو تو ماشاءاللہ
کڑیل جوان سارے
میرے درد میرے بیٹے
میں ہوں صاحب_نرینہ
یہ نصیب ہم نے دیکھا
ہر بات میں جواری
کبھی جیت لائے موجیں
کبھی ہار دے سفینہ
نہیں اعتبار کوئی
رزب نفس_بد گماں کا
نہ اندازہء حرف_آخر
نہ آخری تخمینہ

(رزب تبریز)

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer