Latest Post
Loading...

Kis Ko Qatil Main Kahon Kis Ko Maseeha Samjhon,Sab Yahan Dost Hi Baithey Hain Kise Kia Samjhon


کس کو قاتل میں کہوں کس کو مسیحا سمجھوں
سب یہاں دوست ہی بیٹھے ہیں کسے کیا سمجھوں
وہ بھی کیا دن تھے کہ ہر وہم یقیں ہوتا تھا
اب حقیقت نظر آئے تو اسے کیا سمجھوں
دل جو ٹوٹا تو کئی ہاتھ دعا کو اٹّھے
ایسے ماحول میں اب کس کو پرایا سمجھوں
ظلم یہ ہے کہ ہے یکتا تیری بیگانہ روی
لطف یہ ہے کہ میں اب تک تجھے اپنا سمجھوں
احمد ندیم قاسمی

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer