Latest Post
Loading...

Phir Yun Hoa Keh Dukh Hi Uthaye Tamam Umar Phir Yun Hoa Keh Aansoo Bahaye Tamam Umar


شاعر غیاث الدین غیاث

پھر یوں ہوا کہ دکھ ہی اٹھاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ آنسو بہاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ نکلے کسی کی تلاش میں
پھر یوں ہوا کہ خود کو نہ پاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ باتوں میں ہم اس کے آ گۓ
پھر یوں ہوا کہ دھوکے ہی کھاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ دل میں کسی کو بسا لیا
پھر یوں ہوا کہ خواب سجاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ وعدہ وفا کر نہ سکا
پھر یوں ہوا کہ دیپ جلاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ دامن ۓ دل داغ داغ تھا
پھر یوں ہوا کہ داغ مٹاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ راستے ویراں ہو گۓ
پھر یوں ہوا کہ پھول کھلاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ دکھ ہمیں محبوب ہو گۓ
پھر یوں ہوا کہ دل سے لگاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ اور کسی کے نہ ہو سکے
پھر یوں ہوا کہ وعدے نبھاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ فاصلے بڑھتے چلے گۓ
پھر یوں ہوا کہ رنج بھلاۓ تمام عمر
پھر یوں ہوا کہ بیٹھ گۓ راہ میں غیاث
پھر یوں ہوا کہ وہ بھی نہ آۓ تمام عمر


Poet:Ghayas-u-Din Ghayas

Phir Yun Hoa Keh Dukh Hi Uthaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Aansoo Bahaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Nikly Kisi Ke Talash Mein

Phir Yun Hoa Keh Khud Ko Na Paaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Baton Mein Hum Uske Aa Gaye

Phir Yun Hoa Keh Dhoke Hi Khaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Dil Mein Kisi Ko Basa Lia

Phir Yun Hoa Keh Khuwab Sajaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Wada-e-Wafa Na Kar Saka

Phir Yun Hoa Keh Deep Jalye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Daman-e-Dil Dagh Dagh Tha

Phir Yun Hoa Keh Dagh Mitaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Rastey Veeran Ho Gaye

Phir Yun Hoa Keh Phool Khilaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Dukh Hamein Mahboob Ho Gaye

Phir Yun Hoa Keh Dil Se Lagaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Aur Kisi Ke Na Ho Sakey

Phir Yun Hoa Keh Wa'adey Nibhaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Fasley Badtey Chaley Gaye

Phir Yun Hoa Keh Ranj Bhulaye Tamam Umar

Phir Yun Hoa Keh Baith Gaye Raah Mein GHAYAS

Phir Yun Hoa Keh Wo Bhi Na Aaye Tamam Umar

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer