Latest Post
Loading...

Har Koi Dil Ki Hatheeli Pe Hai Sehra Rakhe,Kis Ko Seraab Kare Wo Kise Piyaasa Rakhe



ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے
کس کو سیراب کرے وہ  کسے پیاسا رکھے
*

عُمر بھر کون نبھاتا ہے تعلق اِتنا
اے میری جان کے دُشمن  تجھے اللہ رکھے
*
ہم کو اچھا نہیں لگتا کوئی ہم نام ترا
کوئی تجھ سا ہو  تو پھر نام بھی تجھ سا رکھے
*
دل بھی پاگل ہے  کہ اُس شخص سے وابستہ ہے
جو کسی اور کا ہونے دے  نہ اپنا رکھے
*
کم نہیں طمعِ عبادت بھی تو حرصِ زر سے
فقر تو وہ ہے  کہ جو دین نہ دُنیا رکھے
*
ہنس نہ اتنا بھی  فقیروں کے اکیلے پن پر
جاااا خُدا میری طرح تجھ کو بھی ، تنہا رکھے
*
یہ قناعت ہے ، اطاعت ہے ، کہ چاہت ہے ، فراز
ہم تو راضی ہیں وہ جس حال میں ، جسیا رکھے


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer