Latest Post
Loading...

Sun Ay Saaqi Chala Saaghar De Ana Sahal Tha Dil Ka


شاعر خواجہ حافظ شیراز
بک دیوان ۓ حافظ صفحہ 52

انتخاب اجڑا دل

سن اے ساقی چلا ساغر دے آنا سہل تھا دل کا

مگر اب عشق میں ہے سامنا مشکل پے مشکل کا

جو بوۓ نافہ طرے سے صبا پچھلے کو کھول آۓ

بھرے بل مشکیں پیچ کیا کیا کھاۓ خوں ۓ دل کا

مصلہ رنگ لے مے سے اگر پیر ۓ مغاں کہہ دے

سمجھ رہبر کو ناواقف نہ رسم و راہ منزل کا

یہ کالی رات طوفاں سر پہ منہ پھاڑے بھنور آگے
 

دل اس بپتا کو جانے کیا سبکساراں ۓ ساحل کا

ہوئی خود رائگاں کاموں میں آخر وجہ رسوائی

رہا کب راز بن کر مشوروں میں نقل محفل کا

ہمیں کیا منزل ۓ جاناں میں لطف ۓ امن و آسایش

جگا دے ہر گھڑی گھڑیال باندھو بند محمل کا

حضوری چاہے گر حافظ تو رکھ پیش نظر اس کو

اسے دیکھتے دنیا چھوڑ دے پھینک دے یے ٹکڑا ململ کا


0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer