Latest Post
Loading...

Hijar Ki Shab Ka Kisi Ism Me Katna Mushkil


ہجر کی شب کا کسی اِسم میں کٹنا مشکل
چاند پورا ہے تو پھر درد کا گھٹنا مشکل
موجہءِ خواب ہے وہ ، اُس کے ٹھکانے معلوم
اب گیا ہے تو یہ سمجھو کہ پلٹنا مشکل
جن درختوں کی جڑیں دل میں اُتر جاتی ہیں
اُن کا آندھی کی درانتی سے بھی کٹنا مشکل
قوتِ غم ہے جو اِس طرح سنبھالے ہے مجھے
ورنہ بکھروں کسی لمحے تو سمٹنا مشکل
پروین شاکر

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer