Latest Post
Loading...

Uthai Hai Tou Nafrat Ki Utha Deewar Bismillah


اٹھائی ہے تو نفرت کی اٹھا دیوار بسم اللہ
میری سچی محبت سے تو کر انکار بسم اللہ
کہا اس نے میری خاطر یہ کوہ- غم اٹھاؤ گئے.؟
جواباً ہم بھی بول اٹھے مرے دلدار بسم اللہ
جہاں کو چھوڑ کر جب ہم ترے کوچے میں آ بیٹھے
تو پھر سنگِ ملامت سے ہو کیوں انکار بسم اللہ
پجاری زر کے ہو تو ہاتھ میں سچ کا علم کیوں ہے؟
اگر منصور ہو تو پھر یہ سنگ و دار بسم اللہ
ہمیں تو عہدِ الفت کو قیامت تک نبھانا ہے
وہ رہتا ہے تو ہم سے رہے بیزار بسم اللہ
کہا اس نے مجھے معیذ! سر تیرا قلم کر دیں؟
مؤدب ہو کر ہم نے بھی کہا سرکار بسم اللہ

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer