Latest Post
Loading...

Itna To Zindagi Mein Kisi Ki Khalal Parre



اِتنا تو زندگی میں کسی کی خلل پڑے
ہنسنے سے ہو سکون نہ رونے سے کَل پڑے
**
جس طرح ہنس رہا ہوں میں پی پی کے گرم اشک
یُوں دُوسرا ہنسے تو کلیجہ نِکل پڑے
**
اِک تُم کہ تُم کو فکرِ نشیب و فراز ہے
اِک ہم کہ چل پڑے تو بہرحال چل پڑے
**
ساقی سبھی کو ہے غمِ تشنہ لبی، مگر
مے ہے اُسی کی نام پہ جس کے اُبل پڑے
**
مُدّت کے بعد اُس نے جو کی لُطف کی نگاہ
جی خوش تو ہو گیا، مگر آنسو نِکل پڑے
**
کیفی اعظمی
**
 

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer