Latest Post
Loading...

Sar Uthaon To Jaan Jati Hai,Aur Jhuka Loon To Shaan Jati Hai

سر اٹھاؤں تو جان جاتی ھے
اور جھکا لوں تو شان جاتی ھے
خامشی بھی مجھے قبول نہیں
کچھ کہوں تو زبان جاتی ھے
بد دعا تم کسی کی مت لینا
یہ سوئے آسمان جاتی ھے
موت اپنا خراج لینے کو
روح کے درمیان جاتی ھے
نقد لینے کوئی نہیں آتا
قرض دوں تو دکان جاتی ھے
اک تیری شکل دیکھ لینے سے
پورے دن کی تھکان جاتی ھے
میری ماں کا مزاج مت پوچھو
صرف باتوں سے مان جاتی ھے

0 comments:

Post a Comment

 
Toggle Footer